میمن ویلفیئر سوسائٹی، "ماسا” جدہ نے چوتھے عبدالستار ایدھی ایوارڈ منعقد کیا۔

85 Views

میمن ویلفیئر سوسائٹی، "ماسا” جدہ نے چوتھے عبدالستار ایدھی ایوارڈ منعقد کیا۔

۔۔۔محمد امانت اللہ ۔جدہ

میمن ویلفئیر سوسائٹی ماسا گذشتہ تین سالوں سے عبدالستار ایدھی ایوارڈ منعقد کر رہی ھے، جس میں نمایاں کارکردگی دکھانے والے کو ایوارڈ سے نوازا جاتا ھے۔ اس سال
احمد کمال مکی کا نام تجویز کیا گیا
پچھلے بارہ سالوں سے انکی ماسا سے وابس وابستگی ھے۔
انہوں نے کورونا لاک ڈائون لوگوں کو مدد فراہم کی ، پرانے کپڑے اور ادویات کا ٹارگٹ پورا کر لیا ھے۔
اسکے علاوہ ورکنگ کمیٹی میں بھرپور تعاون کیا۔
اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا میں اللہ کی رضا کے لیے لوگوں کی خدمت کرتا ہوں۔
عبد الستار ایدھی صاحب کی طرح تو نہیں بن سکتا مگر میری یہی کوشش ہوتی ھے لوگوں کے کام آؤں۔
جو بھی وسائل میرے پاس ہیں انکو بروکار لانے کی بھرپور کوشش کرتا ہوں۔
ایوارڈ کی تقریب مقامی رسٹورانٹ میں کی گئی ، کورونا کے ایس او پیز کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے مخصوص شخصیات کو مدعو کیا گیا، جن میں ماسا بورڈ ممبران، میڈیا عہدیداران اور مختلف طبقہ ہائے فکر کے لوگوں شامل تھے۔

پروگرام کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا ، تلاوت کی سعادت خطیب سراج لالہ نے حاصل کی۔ نعت رسول مقبول ﷺ پڑھنے کا شرف مدثر شیخا کو حاصل ہوا۔ تقریب میں نظامت کے فرائض سراج آدمجی نے اپنے منفرد اور والہانہ انداز میں ادا کیا ۔

ماسا کے شعیب سکندر  نے مہمان خصوصی جناب محمد امین المیمنی اور بزنس کمیونٹی جدہ کے صدر اور نیوز چینل 10 کے سی ای او ابوبکر میمن کا پروگرام میں شرکت کا شکریہ ادا کیا۔
انہوں نے بورڈ ممبران، تمام حاضرین اور میڈیا کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا آپ لوگوں کی آمد ہمارے لیے باعث افتخار ھے۔

شعیب سکندر  نے کہا بچپن کے دس سال میں نے عبدالستار ایدھی کے ساتھ کام کرنے کا شرف حاصل کیا۔ بطور ممبر ایدھی فاؤنڈیشن کا حصہ بھی رہا ۔
ایدھی کی شخصیت اور انسانی مدد کے جذبے نے انہیں بہت متاثر کیا جسکی وجہ سے وہ آج ماسا کے پلیٹ فارم سے فلاحی سرگرمیوں میں مصروف عمل ہیں۔

جنرل سیکرٹری صادق سوراٹھیا نے مولانا ایدھی کی کاوشوں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کس طرح دلجمی کے ساتھ ایک ایمبولینس سے کام کو شروع کیا اور عالمی سطح پر ایک معروف ادارے میں تبدیل ہوتے ہوئے اپنی آنکھوں سے دیکھا۔
نوبل انعام کا میرے سامنے کوئی حیثیت نہیں ھے میں صرف انسانیت کی پرواہ کرتا ہوں۔
مولانا عبدالستار ایدھی کے اس قول کے پیش نظر انکی بےمثال اور بے لوث خدمت خلق کو خراج عقیدت پیش کیا۔
انہوں نے کہا ماسا کی کوشش ھے ایدھی کے اس پیغام کو پاکستان کے تمام بچوں تک پہنچاؤں۔
ماسا کمیونٹی کی خدمت بلا تفریق کر رہی ھے۔

مہمان خصوصی جناب محمد امین المیمنی نے ماسا عہدیداران کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انہیں بہت خوشی ہوئی کہ ماسا نے اس عظیم شخصیت کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں انہیں بطور مہمان خصوصی مدعو کیا۔

انہوں نےاحمد کمال مکی کو ایدھی ایوارڈ پیش کیا۔
حاضرین نے کھڑے ہوکر انکی پذیرائی کی اور ہال تالیوں سے گونج اٹھا۔
احمد کمال مکی نے ایدھی ایوارڈ کیلئے اپنے انتخاب پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے ماسا ایوارڈ پینل کا شکریہ ادا کیا فلاحی کاموں میں میری فیملی نے میرا بھرپور ساتھ دیا ایوارڈ کی وصولی میں انکا اہم کردار ہے۔

عالمی اردو مرکز جدہ کے صدر اطہر نفیس عباسی نے ایدھی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے اپنا مذموم کلام پیش کیا۔
پاکستان جرنلسٹ فورم کے چیئرمین امیر محمد خان نے کہا ایدھی کی زندگی کا مقصد جہاں انسانیت کی خدمت کرنا تھا وہیں پاکستان کو ایک فلاحی مملکت بنانے کا خواب تھا۔ آج ماسا انہی کے مشن کو آگے بڑھا رہی ھے۔
محمد امانت اللہ نیوز 10 چینل کی نمائندگی کرتے ہوئے کہا میں پچھلے دس سالوں سے ماسا کی تقریبات دیکھ رہا ہوں۔ ماسا میں نوجوان کی شمولیت اور بلخصوص شعیب سکندر کی قیادت میں جس طرح پروان چڑھ رہی ھے یہ ہمارے لیے اور تمام دوسرے فلاحی اداروں کے لیے مشل راہ ھے۔

ماسا پیٹرنز محمد بدیع، یونس حبیب اور عبدالرحمن مرچنٹ نے صحافیوں اور دیگر مہمانان کو تحائف سے نوازا ۔
گذشتہ ماہ سعودی عرب کے یوم الوطنی کے حوالے سے منعقدہ ڈرائنگ مقابلہ جیتنے والے تین بچے حذیفہ خالد، مدثر شیخا اور حسان یونس کی حوصلہ افزائی کے لئے انکو میڈلز اور اسناد بھی دیے گئے۔

اختتامی کلمات نائب صدر وسیم عبدالرزاق تائی نے تمام حاضرین اور مہمان خصوصی کا پروگرام میں شرکت پر انکا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا۔ ایونٹ کمیٹی کے سربراہ خالد تنوما اور انکی ٹیم عقیل تیلی، جاوید خیرانی، سراج لالہ، احمد مکی، سراج آدمجی، عمران مسقطیہ، محمد کبیر اور خزانچی عرفان بھمڑی کو اس کامیاب ایونٹ کے انعقاد پر مبارکباد پیش کی۔

تقریب کا اختتام پر تکلف عشائیہ پر ہوا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے