ویرات کوہلی ورلڈ کپ میں پاکستان سے ہارنے والے پہلے کپتان بن گئے

55 Views

بھارتی کپتان ویرات کوہلی  ورلڈ کپ میچز کے 28 برسوں کے دوران پاکستان سے شکست کھانے والے پہلے کپتان بن گئے ہیں۔

گزشتہ روز دبئی کرکٹ اسٹیڈیم میں کرکٹ کی دنیا کی دو بڑی حریف ٹیموں کا آمنا سامنا ہوا، بھارت 11 کی کپتانی ویرات کوہلی جبکہ پاکستانی شاہینوں کی کپتانی بابر اعظم نے کی۔

بابر اعظم نے گزشتہ روز پاکستان کو بھارت کے خلاف 10 وکٹوں سے تاریخی فتح دلا ئی۔

اس تار یخی میچ کے دوران جہاں پاکستانی ٹیم نے کئی ریکارڈز بنائے وہیں  بھارت کا پاکستان سے  28 برسوں سے لگاتار  جیتنے کا ریکارڈ بھی ٹوٹ گیا۔

بھارت نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کو جیت کے لیے 152 رنز کا ہدف دیا جو پاکستانی شاہینوں نے بغیر کسی وکٹ کے نقصان پر پورا کر دکھایا اور یہ بھی پاکستانی سورماؤں کا ایک ریکارڈ تھا۔

دوسری جانب اس میچ میں پاکستان کے ہاتھوں بد ترین شکست کھانے کے بعد ویرات کوہلی پاکستان سے ٹی20 ورلڈ کپ میچز میں ہارنے والے پہلے کپتان بن گئے۔

22 کڑور عوام کی آنکھوں کا تارا بنے ہوئے محمد رضوان نے میچ میں 79 اور بابر اعظم نے 68 رنز بنائے اور پاکستان کو باآسانی فتح سے ہمکنار کیا۔

واضح رہے کہ یہ ورلڈ کپ مقابلوں میں پاکستان کی بھارت کے خلاف پہلی فتح ہے اور ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں بھارت پہلی مرتبہ 10 وکٹوں سے پاکستان سے ہارا ہے جبکہ پاکستان بھی پہلی ہی مرتبہ ٹی ٹوئنٹیز میں کوئی میچ 10 وکٹوں سے جیتا ہے۔

پاکستان کی 28 سال بعد بھارت کیخلاف 10 وکٹ کی فتح

ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ کے میچ میں پاکستان نے بھارت کے خلاف 10 وکٹ سے  فتح حاصل کرلی، جو روایتی حریف کیخلاف 28 سال بعد 10 وکٹوں سے جیت ہے۔

پاکستان نے ٹیسٹ کے بعد ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ میں بھی بھارت کو 10 وکٹ سے ہرادیا، پاکستان نے 1983 میں بھارت کو فیصل آباد ٹیسٹ میں 10 وکٹ سے ہرایا تھا۔

پاکستان نے ورلڈکپ مقابلوں میں بھارت سے شکست کا جمود توڑ کر اسے چاروں شانے چت کرتے ہوئے 10 وکٹوں سے ہرادیا۔

بھارت کا 152 رنز کا دیا گیا ہدف پاکستان نے بغیر کسی نقصان پر 18ویں اوور میں حاصل کرلیا۔

دونوں نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنی اپنی نصف سنچریاں مکمل کیں۔

محمد رضوان نے شاندار بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 55 گیندوں پر 6 چوکوں اور 3 چھکوں کی بدولت 79 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔

کپتان بابراعظم کے بلے نے بھی رنز اگلے اور انہوں نے 52 گیندوں پر 6 چوکوں اور 2 چھکوں کی مدد سے 68 رنز کی اننگز کھیلی۔

بہترین بولنگ پرفارمنس پر شاہین شاہ آفریدی کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

خیال رہے کہ بھارت نے کپتان ویرات کوہلی کی شاندار 57 اور رشبھ پنت کے 39 رنز کی بدولت مقررہ 20 اوورز میں 7 وکٹ پر 151 رنز بنائے تھے۔

میچ کے آغاز میں پاکستانی بولر شاہین شاہ آفریدی نے 6 کے اسکور پر دونوں بھارتی اوپنرز کو پویلین بھیج کر میچ پر گرین شرٹس کی پوزیشن مستحکم بنادی۔

پہلے اوور میں شاہین شاہ آفریدی نے روہیت شرما کو صفر پر میدان بدر کیا تو اننگز کے تیسرے اوور کی پہلی گیند پر شاہین نے کے ایل راہول کو بولڈ کردیا۔

اس کے بعد بھارتی کپتان ویرات کوہلی نے سوریا کمار یادیو کے ہمراہ 25 رنز کی شراکت قائم کی، حسن علی نے محمد رضوان کی مدد سے سوریا کمار کو 11 کے انفرادی اسکور پر قابو کرلیا۔

یوں بھارت کی ابتدائی تین وکٹیں 31 کے اسکور پر گرگئیں، ایسے میں بھارتی کپتان ویرات کوہلی نے وکٹ پر روکنے اور مزید تحمل کیساتھ کھیلنے کا فیصلہ کیا۔

انہوں نے اس موقع پر آنے والے لیفٹ ہینڈ بیٹسمین رشبھ پنت کو موقع دیا کہ وہ کھل کر کھیلیں، اس دوران دونوں کھلاڑیوں نے اسکور میں مجموعی طور پر 53 رنز کی شراکت قائم کی۔

رشبھ پنت نے 30 گیندوں پر 2 چھکوں اور اتنے ہی چوکوں کی مدد 39 رنز بنائے انہیں شاداب خان نے آؤٹ کیا۔

بھارت کی پانچویں وکٹ 125 کے اسکور پر گری جبکہ رویندر جدیجا 13 رنز بنا کر حسن علی کا دوسرا شکار بن گئے۔ اس کے بعد 133 کے مجموعے پر گرین شرٹس کو بڑی وکٹ مل گئی، ویرات کوہلی کو شاہین شاہ آفریدی نے 57 انفرادی اسکور پر میدان سے واپسی کا راستہ دکھایا۔

ہردیک پانڈیا 11 رنز بنا کر حارث رؤف کا شکار بنے تو بھارت کی 7ویں وکٹ 146 رنز پر گر گئی۔

پاکستان کی طرف سے شاہین شاہ آفریدی نے 3، حسن علی نے 2، شاداب خان اور حارث رؤف نے ایک ایک وکٹ اپنے نام کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے