میمن ویلفیئر سوسائٹی ماسا جدہ نے نویں تعلیمی ایوارڈ کا انعقاد کیا

67 Views

۔۔۔محمد امانت اللہ ۔ جدہ

میمن ویلفیئر سوسائٹی ماسا جدہ نے نویں تعلیمی ایوارڈ کا انعقاد گزشتہ رات کورنیش پر کیا۔
تقریب میں نمایاں پوزیشن میں کامیاب ہونے والے بچے اور بچیوں کو تعریفی سرٹیفکیٹ، انعامات اور شیلڈ دیے گئے۔
جن میں پرائمری اور سیکنڈری کلاسز، او اینڈ اے لیول، گریجویٹ، پوسٹ گریجویٹ، ڈگری ہولڈرز کے علاوہ حافظ قرآن شامل تھے۔

سعودی عرب میں مقیم میمن برادری کی معروف کاروباری اور سماجی شخصیات کے ساتھ ساتھ پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے نمائندگان سمیت چار سو افراد نے شرکت فرمائی۔

تقریب کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ہوا جسکی سعادت ابراھیم خیمانی نے حاصل کی۔
فہیم شیوانی نے نعتیہ کلام پیش کیا۔
جوائنٹ سیکریٹری جاوید اشرف خیرانی نے ماسا کی ایجوکیشن کمیٹی کا تعارف کرایا جسکے سربراہ محمد سراج لالہ ہیں۔
اپنی ٹیم کے ہمراہ پچھلے دو ماہ سے تعلیمی اسناد کو جمع کرنا اور اسکی جانچ پڑتال کرتے رہے۔
ایجوکیشن کمیٹی کی سفارشات پر آج کی تقریب کا انعقاد کیا گیا ھے۔

ماسا کے صدر شعیب سکندر نے استقبالیہ خطاب میں تمام حاضرین اور ایوارڈ کیلئے منتخب ہونے والے تمام طلبہ و طالبات کو مبارکباد پیش کیا۔
انہوں نے تعلیم کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا آج کے تعلیم یافتہ نوجوان مستقل میں قوم کے معمار ہیں۔ انہوں نے کہا ماسا میں نوجوان قیادت ابھر کر سامنے آرہی ھے ہم انکی حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔
ماسا صرف تعلیمی میدان میں ہی نہیں بلکہ دیگر سرگرمیوں میں بھی نوجوانوں کو سامنے لانے کے مختلف نوعیت کے پروگرام ترتیب دیتی رہتی ھے۔
تعلیم یافتہ معاشرہ مستقبل میں ترقی یافتہ قومیں بنتی ہیں ہم اسی راستے پر گامزن ہیں۔
جنرل سیکرٹری صادق سوراٹھیا نے تمام بچوں کی ماؤں کے کردار کو سراہا کہ جنہوں نے لاک ڈاؤن کے دوران آن لائن ایجوکیشن کے وقت بیک وقت ماں اور استاد دونوں کے فرائض سرانجام دیے۔
تقریب کے مہمان خصوصی قونصل جنرل پاکستان جناب خالد مجید ناسازی طبیعت کی وجہ سے شرکت نہ کرسکے انکی صحتیابی کے لیے خصوصی دعائیں کی گئیں۔

تقریب میں ڈاکٹر محمد چھاپڑا نے خصوصی طور پر شرکت کی اور تعلیمی میدان میں بچوں کی حوصلہ افزائی کرنے پر ماسا کے عہدیداران اور ممبران کو خراج تحسین پیش کیا۔
ماسا کی تاریخ میں پہلی بار انزلنہ جاوید خیرانی اور ضیاء صادق سوراٹھیا کی جانب سے تیار گئی ماسا ڈاکومنٹری فلم پردہ اسکرین پر حاضرین کو دکھائی گئی جسے خوب پذیرائی ملی۔


مسز ارم شعیب سکندر نے کہا تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیت کو بھی خاص مقام حاصل ھے۔ میں ان ماؤں اور بہنوں کو بھی خراج تحسین پیش کرتی ہوں جو بچوں کی تربیت کا خیال رکھتی ہیں۔
ڈاکٹر شائستہ خالد نے اپنے خطاب میں تعلیم کی اہمیت اور دور حاضر کے علوم میں مہارت حاصل کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے کہا بچوں کی نفسیات کو والدین اور اساتذہ بہتر طور پر سمجھ سکتے ہیں۔
اسکے لیے ضروری ھے والدین اور اساتذہ میں مسلسل رابطہ برقرار رہے۔
اسٹیج پر سراج آدمجی کا تیار کیا گیا ٹیبلو بچوں نے پرفارم کیا جسے خوب سراہا گیا۔
وقفے وقفے سے تقریب کے دوران مختلف کلاسز کے طالب علموں میں مہمانان کے ہاتھوں ایوارڈ بھی تقسیم کئے جاتے رہے اور مختلف اسپانسرز کی جانب سے دیے گئے تحائف اور فوڈ کوپنز بھی ہال میں موجود مہمانوں میں تقسیم کیےگئے۔

ایونٹ میں کمپیئرنگ کے فرائض عمران امین مسقطیہ نے ادا کیا۔
ھبا شاہد ، اقصی کولساوالا ، منال یونس، زینب کبیر اور زین وسیم نے انکی معاونت کی۔
تقریب کے اختتام پر نائب صدر وسیم عبدالرزاق تائی نے تمام مرد و خواتین عہدیداران و ممبران، اسپانسرز، میڈیا نمائندگان، والنٹیرز اور ان تمام لوگوں کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے اس ایونٹ کو کامیاب بنانے کے لیے بھرپور کردار ادا کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے