وزیر اعظم بتا دیں کہ ہم کیا کریں، پھر ہم اپنا فیصلہ خود کریں گے، خالد مقبول

76 Views

ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینر خالد مقبول صدیقی نے کہا ہے کہ ٹنڈو الہ یار میں ہمارے کارکن خلیل الرحمان کا بہیمانہ قتل کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ جس کے بیٹے کو مارا  گیا اس کے رشتے داروں کے گھروں  پر رات میں چھاپے  مارے گئے، سندھ حکومت ڈاکوؤں اور پولیس کے درمیان سہولت کاری کاایک ادارہ بن کررہ گئی ہے۔

خالد مقبول نے کہا کہ وزیر اعظم بتا دیں کہ ہم کیا کریں،  پھر ہم اپنا فیصلہ خود کریں گے۔

کراچی میں بہادر آباد پر  پریس کانفرنس کرتے ہوئے خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ گزشتہ کئی سالوں سے بتارہے ہیں کہ پاکستان پیپلز پارٹی اپنے 1970 کے ایجنڈے پر کاربند ہے، ٹنڈو الہ یار میں ماؤں بیٹیوں پر لاٹھی چارج کیا گیا، عدالت میں ایک مہاجر کو قتل کردیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم ہمیں بتادیں کہ ہم کیا کریں،  پھر ہم اپنا فیصلہ خود کرینگے ۔

 ان کا کہنا تھا کہ سندھی قوم پرست، پیپلزپارٹی اور پولیس آپس میں ملے ہوئے ہیں، سندھ پولیس پیپلز پارٹی کا ملیٹنٹ ونگ ہے۔

 ان کا کہنا تھا کہ زرداری صاحب کی جیب اس ملک اور شہر کے مستقبل سے بڑی نہیں ہوتی، ہمیں ان کے پاس جانے کیلئے آزمایا نہ جائے، پیپلزپارٹی نے خلیل الرحمان کے قتل کے ساتھ لسانی فسادات کا آغاز کردیا ہے، ہمیں انتہائی اقدام پر مجبور نہ کیا جائے۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ ڈی آئی جی، ایس ایس پی کو 24 گھنٹے کے اندر معطل کیا جائے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے