تحریک لبیک پر پابندی کا فیصلہ، وزیراعظم عمران خان پر شدید دباؤ

83 Views

(24نیوز)تحریک لبیک پر پابندی کے فیصلے کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال کے پیش نظر وزیراعظم عمران پر شدید دباؤ ۔متعدد وفاقی و صوبائی وزراء سمیت اپنی ہی جماعت کے ارکان اسمبلی نے تحریک لبیک پر پابندی کا فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کردیا۔وزراء اور متعدد ارکان اسمبلی نے وزیراعظم کو معاملات مذاکرات کے حل کرنے کا مطالبہ  بھی کردیا۔

 تفصیلات کے مطابق  تحریک لبیک پر پابندی کے بعد حکومت کو عوامی حلقوں کے ساتھ ساتھ اپنے ہی ارکان قومی و صوبائی اسمبلی کی جانب سے شدید دباؤ کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔متعدد وفاقی و صوبائی وزراء سمیت اپنی ہی جماعت کے ارکان اسمبلی نے تحریک لبیک پر پابندی کا فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کردیا۔

ٹی ایل پی کے معاملے پر متعدد اراکین اسمبلی کی قیادت علی محمد خان کر رہے ہیں، وزیراعظم سے وفد کی صورت میں دو ملاقاتیں بھی ہو چکی ہیں۔ارکان اسمبلی کا موقف ہے کہ معاملہ  انتہائی حساس ہے، آئندہ الیکشن میں مخالفین مذہب کا کارڈ کھیل کر تحریک انصاف کو سیاسی نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ہمارے حلقے کے عوام فیصلے پر نالاں ہیں، فوری نظرثانی کی جائے۔

ارکان اسمبلی نے خدشے کا اظہار کیا کہ دیگر مذہبی جماعتیں بھی ٹی ایل پی کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کر رہی ہیں، کس کس پر پابندی لگائیں گے۔ٹی ایل پی پر پابندی کا فیصلہ واپس لینے میں تاخیر کی تو مثبت نتائج برآمد نہیں ہوں گے۔ارکان اسمبلی کا مزید کہنا تھا کہ ٹی ایل پی پر پابندی کا فیصلہ جذباتی بنیادوں پر کیا گیا، پابندی کا اعلان پہلے ہوا سمری کابینہ کو بعد میں موصول ہوئی۔

دوسری جانب ذرائع علی محمد خان کا کہنا ہے کہ ٹی ایل پی پر عائد پابندی کا فیصلہ فوری واپس نہ لیا گیا تو مجھ سمیت کئی ارکان اسمبلی نہ صرف مستعفی بلکہ پی ٹی آئی چھوڑنے کو بھی تیار ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے