او آئی سی میں پاکستان کے مستقل نمائندے رضوان سعید شیخ کی پاکستانی میڈیا کو بریفنگ

302 Views

او آئی سی میں پاکستان کے مستقل نمائندے رضوان سعید شیخ نے
پاکستانی میڈیا کو بریفنگ دی۔

۔۔۔محمد امانت اللہ ۔ جدہ

57 اسلامی ممالک کی تنظیم او آئی سی میں کشمیر پر پاکستان کی جانب سے مستقل نمائندے سفیر رضوان سعید شیخ نے کہا ہے کہ کشمیر پر او آئی سی رابطہ گروپ کا اجلاس اہم ترین سفارتی پیش رفت ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ او آئی سی نے مقبوضہ کشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کی بھارتی سازش کو یکسر مسترد کر دیا، انہوں نے کہا او آئی سی سیکرٹریٹ مقبوضہ کشمیر میں کرونا سے وابستہ مسائل پر رپورٹ تیار کرے گا، رضوان شیخ نے کہا کہ او آئی سی رابطہ گروپ کا اعلامیہ مسئلہ کشمیر پر ایک توانا آواز ہے سفیر رضوان سعید شیخ جدہ میں دیے گئے ایک عشائیہ میں جدہ میں پاکستانی میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کررہے تھے۔

رضوان شیخ نے بتایا کہ او آئی سی رابطہ گروپ کا ہنگامی اجلاس پاکستان کے مطالبے پر کشمیر میں بھارتی مظالم کی وجہ سے بگڑتی صورتحال پر تبادلہ خیال کرنے کیلئے طلب کیا گیا تھا۔

جسکی صدارت او آئی سی کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر العثیمین نے کی۔ اجلاس یں آذر بئیجان، نائجر، سعودی عرب اور ترکی کے وزراء خارجہ نے آن لائن شرکت کی اجلاس میں خصوصی طور کشمیری عوام کے نمائیندوں صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان اور انسانی حقوق کے ایگزیکٹو ڈائیریکٹرنے بھی شرکت کی۔
اجلاس میں غیرمعمولی قرارداد کے ذریعے کشمیری عوام پر بھارتی مظالم کی مذمت کرتے ہوئے کشمیری عوام کے حق خود ارادیت اور بھارتی قبضے سے آزادی کے حق کے حصول کے لئے کشمیری عوام کی جائز جدوجہد کے لئے حمایت کا اعادہ کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ مسئلہ کشمیر امت مسلمہ کے لئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

اجلاس نے اس بات پر زور دیا کہ بھارت کی جانب سے نئے اعلان کردہ "جموں و کشمیر تنظیم نو آرڈر 2020” اور "جموں و کشمیر ڈومیسائل سرٹیفکیٹ رولز 2020” کا واضح طور پر مقصد کشمیر کے آبادیاتی ڈھانچے کو تبدیل کرنا ہے۔ جو کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی صریح خلاف ورزی پر مبنی ہے۔
بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ تنازعہ کشمیر کا تصفیہ کے پرامن حل کی نفی کرتا ھے۔
رابط کمیٹی نے بھارت سے مطالبہ کیا کہ بھارت فوری طور پر اس طرح کی یکطرفہ اور غیر قانونی کارروائیاں ختم کرے۔
کشمیری عوام کو اقوام متحدہ کے زیر نگرانی مبینہ آزادانہ طور پر اپنے حق خودارادیت کا استعمال کرنے کی اجازت دیے۔
اجلاس نے متفقہ طور پر مطالبہ کیا کہ بھارت اسلامی تعاون تنظیم، او آئی سی کے انسانی حقوق کے ادارے، آئی پی ایچ آر سی، اقوام متحدہ کے حقائق متلاشی مشن، او آئی سی کے سیکریٹری جنرل کے خصوصی ایلچی برائے جموں و کشمیر، اور بین الاقوامی میڈیا کوانسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کے لئے بلا روک ٹوک رسائی فراہم کریں۔

رابطہ گروپ نے او آئی سی کے ممبر ممالک سے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ علاقے میں کشمیری عوام کے بنیادی انسانی حقوق کے تحفظ کے لئے بھارت کے ساتھ اپنے دوطرفہ تعلقات میں جموں و کشمیر تنازعہ کو اٹھائیں تاکہ مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کو تحفظ حاصل ہوسکے۔
بھارت پر اقوام متحدہ کی متعلقہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت مسئلہ کشمیر کے جلد از جلد حل کے لئے دباؤڈالا جاسکے۔

رضوان شیخ نے کہا کہ اجلاس میں پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کشمیر کی حالیہ صورتحال پر تفصیلی روشنی ڈالی، اور ممبر ممالک کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا، انہوں نے پاکستان کی درخواست پر فوری اجلاس منعقد کیاسفیر رضوان سعید شیخ نے رابطہ گروپ کی قرارداد کو کشمیر کی آزادی کاا یک سنگ میل قرار دیا۔

Follow news10.pk on Twitter and Facebook to join the conversation.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے